کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیاں، برطانوی اراکین پارلیمنٹ کی نریندر مودی پرشدید تنقید – Kashmir Link London

کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیاں، برطانوی اراکین پارلیمنٹ کی نریندر مودی پرشدید تنقید

لندن(کشمیر لنک نیوز) برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال پر بحث کے دوران برطانوی اراکین پارلیمنٹ نے نریندر مودی حکومت پر تنقید کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بحث کا آغاز آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ آن کشمیر کی چیئرپرسن ڈیبی ابراہم نے کیا۔ رکن پارلیمنٹ ڈیبی ابراہم نے بحث کے دوران پارلیمنٹ میں برہان وانی کا ذکر کیا۔ انکا کہنا تھا کہ بچوں سمیت ہزاروں کشمیریوں کو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت حراست میں لیا گیا ہے۔ بھارتی فوج کشمیر میں طاقت کا بے جا استعمال کر رہی ہے۔

ڈیبی ابراہم نے مزید کہا کہ نریندر مودی کو اقوام متحدہ میں خطاب کے موقع پر چیلنج کرنا ہوگا۔رکن برطانوی پارلیمنٹ جیمز ڈیلی کا کہنا تھا کہ کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل درآمد کرایا جائے۔

برطانوی پارلیمنٹ میں درجن بھر ممبران پارلیمنٹ نے اپنے اپنے حلقے کی کشمیری عوام کی امنگوں کی ترجمانی کرتے ہوئے اپنے جذبات بیان کئے۔ اس موقع پر سید علی گیلانی کو بھی خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ اراکین پارلیمنٹ کا کہنا تھا کہ سید علی گیلانی نے اپنی زندگی جدوجہد آزادی پر قربان کردی۔عمران حسین نے کہا کہ اقوام متحدہ اپنی قرار دادوں پرعمل نہیں کراسکتا تو یہ ادارہ کس کام کا ہے۔

ادھر بیلجیئم سے تعلق رکھنے والی یورپین پارلیمنٹ کی رکن سارہ میتھیو نے مقبوضہ کشمیر میں جاری صورتحال پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے۔

سوشل میڈیا اکاؤنٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے ایک پیغام میں انہوں نے کہا کہ ناقدین پر حکومتی چھاپوں کی نئی رپورٹس کے ساتھ جموں و کشمیر میں انسانی بحران جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ اظہار رائے اور اکٹھے ہونےکی آزادی کا تحفظ ہونا چاہیے، اور ہزاروں لوگوں کو جبری قید سے رہا کیا جانا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس حوالے سے احتساب کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔اپنے پیغام میں سارہ میتھیو نے یورپی یونین سے کہا کہ وہ فوری طور پر بھارت پاکستان اور کشمیری نمائندوں کے درمیان بات چیت میں سہولت فراہم کرے اور انسانی حقوق کا احترام یقینی بنائے۔

50% LikesVS
50% Dislikes