گلاسگو: ماحولیات کی عالمی کانفرنس میں پاکستانی نمائیندے ملک امین اسلم سے زیک گولڈ سمتھ کی خصوصی ملاقات – Kashmir Link London

گلاسگو: ماحولیات کی عالمی کانفرنس میں پاکستانی نمائیندے ملک امین اسلم سے زیک گولڈ سمتھ کی خصوصی ملاقات

گلاسگو (کشمیر لنک نیوز) سکاٹ لینڈ میں ہونے والی عالمی ماحولیاتی کانفرنس میں سو سے زائد رہنمائوں نے سی او پی26میں پہلے بڑے معاہدے میں2030تک جنگلات کی کٹائی کو ختم کرنے اور جنگلات کو واپس لانے کا عہد کیا ہے۔ اس ڈیل میں کئے جانے والے وعدوں میں تقریباً 14بلین پونڈ ( 19.2بلین ڈالر ) کے پبک اینڈ پرائیویٹ فنڈز بھی شامل ہیں۔ ماہرین نےاس موو کا خیرمقدم کیا ہے ۔ تاہم انہوں نے متنبہ کیا کہ 2014 کی پچلی موو جنگلات کی کٹائی کی رفتار کو سست کرنے میں بالکل ناکام رہی ہے اور کمیونٹیز کو اس حوالے سے ڈلیور کرنے کی ضرورت ہے ۔ درختوں کی کٹائی اور گرنا کلائیمیٹ چینج میں کردار ادا کرتا ہے۔ اس سے جنگلات کم ہوتے ہیں۔

پاکستان کی طرف سے اس کانفرنس کی نمائیندگی کرنے والے ماحولیات کیلئے وزیر اعظم پاکستان کے معاون خصوصی ملک امین اسلم نے ماحولیاتی آلودگی کے حوالے پاکستان کے اقدامات سے آگاہی دیتے ہوئے شرکا کو بلین سونامی ٹری مہم بارے بتایا۔ اس موقع پر انہوں نے وزیر اعظم کے دوست زیک گولڈسمتھ سے بھی ملاقات کی اور انہیں پیش رفت سے آگاہ کیا۔ اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ ہمیں اپنے جنگلات کو تباہی سے دوچار ہونے سے روکنا ہے اور ہم نیچر کے فاتح کے طور پر انسانیت کے کردار کو ختم کریں اور اس کے بجائے ہم نیچر کے محافظ بن جائیں۔

واضع رہے اس کانفرنس میں عالمی طاقتوں نے کانگو میں دنیا کے دوسرے سب سے بڑے ٹراپیکل رین فاریسٹ کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے 1.1 بلین پونڈ کا فنڈ قائم کرنے کا ارادہ کیا ہے۔ سی او پی 26 کو پیرس معاہدے کی مسلسل عملداری کیلئے اہم قرار دیا جارہا ہے جس میں ممالک نے 2015 میں عالمی درجہ حرارت میں اضافے کو دو ڈگری سینٹی گریڈ تک محدود کرنے اور محفوظ 1.5 ڈگری کیپ کیلئے کام کرنے کا عزم کا اظہار کیا گیا تھا ۔ یونیورسٹی کالج لندن میں کلائیمیٹ اینڈ فاریسٹ ماہر پروفیسر سائمن لیوس نے کہا کہ بہت سارے ملکوں کی جانب سے جنگلات کی کٹائی کے خاتمے کیلئے سیاسی عزم اور اس مقصد کو آگے بڑھانے کیلئے اہم فنڈز کا قیام بڑی خوش خبری ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes