لندن میں کامیاب سکھ ریفرنڈم سے بھارتی وزیراعظم کی بے چینی عروج پر، برطانوی ہم منصب سے معاملے پر بات چیت – Kashmir Link London

لندن میں کامیاب سکھ ریفرنڈم سے بھارتی وزیراعظم کی بے چینی عروج پر، برطانوی ہم منصب سے معاملے پر بات چیت

لندن (کشمیر لنک نیوز) برطانیہ میں ہونے والی عاملی ماحولیاتی کانفرنس کے دوران لندن میں سکھوں کے خالصتان بارے ریفرنڈم کے اثرات سامنے آنا شروع ہوگئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق بھارتی وزیراعظم مودی نے بورس جانسن کے ساتھ اپنی مختصر ملاقات میں خالصتان کمپین اور ایکسٹراڈیشن کے ایشوز کو اٹھایا اور دونوں رہنمائوں نے نیشنل سیکورٹی ایڈوائزرز کی لندن میں ملاقات سے اتفاق کیا ہے۔

واضع رہے خالصتان ریفرنڈم میں 30000 سے زائد سکھوں نے حصہ لیا تھا اور اسکا اہتمام سکھ فار جسٹس نامی تنظیم نے کیا تھا۔ ذرائع کے مطابق ریفرنڈم کے بعد گلاسگو میں بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی نے برطانوی وزیراعظم بورس جانسن سے کہا کہ ان کا ملک برطانیہ کے ساتھ خالصتان لیڈرز اور اس کے ایکٹیوسٹس کے ایشو پر بات کرنا چاہتا ہے جو برطانیہ سے آپریٹ کرتے ہیں اور برطانیہ بھر میں خالصتان ریفرنڈم کمپین چلا رہے ہیں۔

گلاسگو میں سی او پی 26 کے پہلےروز میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئےبھارتی سیکرٹری خارجہ نے دعویٰ کیا کہ ملاقات میں وزیراعظم بورس جانسن نے کہا ہے کہ میں سمجھتا ہوں کہ ان میں سے کچھ گروپوں کو لگام ڈالنے کی ضرورت ہے اور جو سرگرمیاں کسی طور پر بھی آئینی یا غیر جمہوری ہیں، ان کو دیکھنے کیلئے واضح طور پر اقدامات کئے جانے چاہئیں اور یہ کہ ان حالیہ واقعات کو حل کرنے کیلئے کیا کیا جا سکتا ہے۔

بھارتی سیکرٹری خارجہ نے اپنی بریفنگ کا بڑا حصہ سکھس فار جسٹس، خالصتان ریفرنڈم کمپین پر صرف کیا اور اس تحریک سے پیدا ہونے والی کشمکش کو کم کرنے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ پرو خالصتان گروپوں کو خالصتان پر بات کرنے کا کوئی قانونی حق نہیں ہے لیکن انہوں نے تسلیم کیا کہ ان کی سرگرمیاں دونوں ملکوں میں ایک خاص سطح پرعدم توازن اور تشویش کا باعث ہیں۔ بھارتی سیکرٹری خارجہ ہرش وردھن شرنگلا نے کہا کہ بھارت اور برطانیہ کے نیشنل سیکورٹی ایڈوائزرز (این ایس ایز) ماہ رواں کے آخر میں برطانیہ میں آپریٹ کرنے والے خالصتان کے جارحانہ رہنمائوں اور کارکنوں کے معاملے پر بات کریں گے۔

اس صورتحال کے جواب میں سکھ فار جسٹس کے ترجمان نے کہا ہے کہ یہ انٹرنیشنل ہیومن رائٹس ایڈووکیسی گروپ ہے جو سکھوں کے حق خود ارادیت کیلئے مہم کی قیادت کر رہا ہے جو کہ یواین چارٹر انٹرنیشنل کنونشن آن سول اینڈ پولیٹیکل رائٹس (آئی سی سی پی آر) میں تمام لوگوں کو دیئے گئے بنیادی حقوق میں سے ایک ہے۔ ایس جے ایف ایک نان گورنمنٹل خالصتان ریفرنڈم کا انتظام کر رہی ہے جو بھارت سے پنجاب کی علیحدگی اور حق خود ارادیت کے سوال پر مبنی ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes