برطانیہ میں خالصتان ریفرنڈم کا دوسرا مرحلہ، مزید دس ہزار سے زائد سکھوں نے حق رائے دہی استعمال کیا – Kashmir Link London

برطانیہ میں خالصتان ریفرنڈم کا دوسرا مرحلہ، مزید دس ہزار سے زائد سکھوں نے حق رائے دہی استعمال کیا

لندن (عمران راجہ) برطانیہ میں آباد سکھوں نے بھارت سے اپنے علیحدہ وطن خالصتان کے حصول کی تحریک کیلئے جو ریفرنڈم مہم کا آغاز کیا تھا اسکے دوسرے مرحلے میں برطانوی دارالحکومت کے سکھ اکثیریتی علاقوں سائوتھ آل اور گریوسینڈ میں ریفرنڈم کرایا گیا۔ دونوں علاقوں کے گردواروں میں سکھ کمیونٹی کی اکثریت نے اپنے اپنے ووٹ کا حق استعمال کیا اور علیحدہ وطن کے حصول کیلئے کوششوں کو دوام بخشا۔

برطانیہ میں خالصتان ریفرنڈم کے دوسرے مرحلے میں دس ہزار سے زائد برطانوی سکھوں نے حصہ لیا، اس سے قبل خالصتان کے قیام کیلئے ریفرنڈم میں 30ہزار سے زائد سکھوں نے حصہ لیا تھا۔ خالصتان ریفرنڈم کےدوسرے مرحلے کیلئے ووٹنگ کا اہتمام لندن کے 2 مختلف اطراف میں کیا گیا ، مغربی حصے میں ساؤتھ آل اور مشرقی حصے کینٹ کے علاقے گریوسینڈ کے گوردواروں میں ووٹرزکی قطاریں لگ گئیں۔

ریفرنڈم کا اہتمام سکھ فار جسٹس نے کیا ہے، سکھ فارجسٹس یورپ،نارتھ امریکا، آسٹریلیا سمیت بھارتی پنجاب میں بھی ریفرنڈم کرانا چاہتی ہے۔ پہلے مرحلے میں وسطی لندن میں ہونے والے ریفرنڈم میں تیس ہزار سے زائد ووٹ ڈالے گئے جبکہ دوسرے مرحلے میں 10 ہزار سے زائد برطانوی سکھوں نے حصہ لیا۔ اس موقع پر سکھ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ بھارتی حکام این آرآئی کارڈ اور ویزے منسوخی کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔

خیال رہے صدرسکھ فارجسٹس سردار اوتارسنگھ نے کہا تھا کہ بھارت نے پنجاب پر قبضہ کر رکھا ہے، برطانیہ کے 175 گردوارے ہمارے ساتھ ہیں۔ خالصتان کےقیام کیلئے ریفرنڈم کے پہلے مرحلے کا آغاز اکتیس اکتوبرکو کوئین الزبتھ ٹوسینٹر لندن سے ہوا تھا، جس میں 30ہزارسےزائدسکھوں نے حصہ لیا تھا جبکہ اس موقع پر بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی برطانیہ کے سرکاری دورے پر موجود تھے۔

50% LikesVS
50% Dislikes