کورونا کے بعد آنے والے وبائی امراض اس سے بھی زیادہ مہلک ہوسکتے ہیں؛ایسٹرا زینکا کی موجد پروفیسر کا انکشاف – Kashmir Link London

کورونا کے بعد آنے والے وبائی امراض اس سے بھی زیادہ مہلک ہوسکتے ہیں؛ایسٹرا زینکا کی موجد پروفیسر کا انکشاف

لندن (اکرم عابد) دنیا میں موجود کروڑوں زندہ اجسام میں اشرف المخلوقات کہلانے والا انسان بعض اوقات قدرت کے سامنے کس قدر بے بس ہوجاتا ہے، اب کورونا کو ہی لیجئے سائینسدانوں اور طبی ماہرین نے کئی ماہ کی دن رات کوششوں کے بعد ویکسین تیار کی تو آکسفورڈ کی پروفیسر سارہ گلبرٹ نے انکشاف کردیا ہے کہ اسکے بعد آنے والے امراض کورونا سے بھی زیادہ مہلک ہوسکتے ہیں۔

کورونا وائرس کی ویکسین ایسٹرا زینیکا کی موجد اور آکسفورڈ یونیورسٹی میں ویکسینالوجی کی پروفیسر سارہ گلبرٹ نے کہا ہے کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ وائرس نے ہماری زندگیوں کو متاثر کیا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ اگلی وبا سے صورتحال مزید خراب ہو سکتی ہے۔ وہ زیادہ پھیل سکتی ہے یا زیادہ خطرناک ہو سکتی ہے یا یہ دونوں چیزیں ہو سکتی ہیں۔ پروفیسر سارہ گلبرٹ کے مطابق جس صورتحال سے ہم اب گزر رہے ہیں ایسا دوبارہ نہیں ہونا چاہیے۔ ہم نے جو پیش رفت کی ہے اور جو علم حاصل کیا ہے اسے رائیگاں نہیں جانا چاہیے۔

پروفیسر سارہ گلبرٹ نے کہا کہ اومیکرون ویریئنٹ تبدیل ہوتا ہے جس کی وجہ سے وائرس زیادہ پھیلتا ہے۔ کورونا وائرس کی اس قسم میں کچھ اضافی تبدیلیاں ہیں جن کا مطلب ہے کہ ویکسین سے پیدا ہونے والی اینٹی باڈیز اومیکرون سے بچانے میں کم موثر ثابت ہو سکتی ہیں۔ انکا مزید کہنا تھا کہ کہ جب تک ہمیں زیادہ معلومات حاصل نہیں ہوتیں ہمیں محتاط رہنا چاہیے اور کورونا کی نئی قسم کو روکنے کے لیے اقدامات کرنے چاہئیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes