سانحہ بارسلونا؛ متاثرہ خاندان کی رکاوٹ کے باوجود ہم میتوں کی وطن واپسی کی تگ و دو میں ہیں، قونصل جنرل – Kashmir Link London

سانحہ بارسلونا؛ متاثرہ خاندان کی رکاوٹ کے باوجود ہم میتوں کی وطن واپسی کی تگ و دو میں ہیں، قونصل جنرل

بارسلونا (کشمیر لنک نیوز) بارسلونا آتش زدگی میں وفات پا جانے والے افراد کی میتوں کی وطن واپسی میں تاخیر کمیونٹی کے ایک رکن کے مشورے پر قریبی رشتہ داروں کی طرف سے قونصل خانے کو جان بوجھ کر بے دخل کرنے کا نتیجہ ہے، اس بات کا اظہار قونصل خانہ بارسلونا میں حالیہ تعینات قونصل جنرل مرزا سلیمان بابر بیگ نے ایک وضاحتی بیان میں کیا۔

انہوں نے کہا کہ قونصل خانہ بارسلونا میں آتشزدگی کے واقعے میں ایک پاکستانی خاندان نصر اقبال، ان کے دو بچوں اور انکی اہلیہ کی موت سے واقف ہےاور شروع سے ہی مرحوم کے بھائی زاہد کے ساتھ ہر ممکن تعاون کر رہا ہے۔ قونصل خانہ کی جانب سے 2 دسمبر سے جسد خاکی کی وطن واپسی کی باقاعدہ کوشش جاری ہے۔ قونصل جنرل کے مشورے کے برعکس، قریبی رشتہ دار زاہد نے کمیونٹی کے ایک فرد کے سمجھانے پر قونصلیٹ کو ترسیل کے عمل سے بے دخل کر دیا اور واپسی کے تمام حقوق کمیونٹی ممبر کے حوالے کر دیئے۔

اس نے 2 دسمبر کے بعد ایک ہفتے کے لیے قونصل خانے سے رابطہ بھی بند کر دیا اور کاتالونیا کے محکمہ صحت کی جانب سے میتوں کی ترسیل کے لیے کمیونٹی ممبران کی درخواست مسترد کیے جانے کے بعد ہی دوبارہ کالز کا جواب دیا۔ بظاہر، زاہد اور کمیونٹی کے ممبر کے ذریعہ جس جنازہ سروس کے ساتھ معاملات طے پائے تھے، وہ میتوں کو ترسیل کے لئے تیار کرنے میں محکمہ صحت کی سخت ہدایات کی پابندی کرنے میں ناکام رہا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سارے عمل سے قونصل خانے کو بے دخل کرنے کے باوجود ہم محکمہ صحت کے تحفظات دور کرنے کے لیے کوشاں رہے، جو اب تک اپنی مقررہ ضروریات پر کوئی سمجھوتہ کرنے کے لیے تیار نہیں ہے۔

ہم ابھی تک کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں اور اس کا حل تلاش کرنے کے لیے محکمہ صحت کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ قونصل جنرل نے President of Catalonia اور Governor of Catalonia سے انسانیت کے ناطے میتوں کی ترسیل پاکستان کے لئے درخواست کی ہے اور ہم ان کے جواب کےمنتظر ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes