انگلینڈ، پاکستان اور آزاد جموں کشمیر کی تاریخ پر مبنی بین الثقافتی فلم کی راچڈیل میں نمائش – Kashmir Link London

انگلینڈ، پاکستان اور آزاد جموں کشمیر کی تاریخ پر مبنی بین الثقافتی فلم کی راچڈیل میں نمائش

راچڈیل (محمد فیاض بشیر) راچڈیل کے مقامی سینما میں قلمکار ،فنکار ،ہدایتکار اور پیشکار ظفر اقبال کی انگلینڈ ،پاکستان اور آزاد جموں کشمیر کی تاریخ پر مبنی بین الثقافتی فلم کی پہلی نمائش کا انعقاد ہوا ۔راچڈیل کونسل کے مئیر کونسلر علی احمد نے خصوصی شرکت کی ۔نمائش میں فلم کے کرداروں اور مقامی افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کر کے مادر وطن سے جڑے رشتے اور یادوں کو پردہ سکرین پر دیکھنے کے ساتھ فلم کو عوام تک پہنچانے والے مرکزی کرداروں کی کاوشوں کو خراج تحسین پیش کیا۔

فلم کے پیشکار ظفر اقبال کا کہنا تھا کہ کافی عرصہ سے کوشش تھی کہ ایسے منصوبے پر کام کیا جائے جس سے ہماری نوجوان نسل جو کہ چھٹیاں گزارنے دنیا کے دیگر ممالک کا رخ کرتی ہے انکا پردہ سکرین کے زریعے مادر وطن سے ناطہ جوڑا جائے ہم نے اس میں اسلام کا بھی حوالہ دیا ہے ہمیں اسکو بھولنا نہیں چاہیے عوام نے بے حد حوصلہ افزائی کی ہے۔راچڈیل کونسل کے مئیر کونسلر علی احمد کا کہنا تھا کہ فلم دیکھ کر مادر وطن کی یاد تازہ ہوئ ہمیں مادر وطن اور مادری زبان کو نہیں بھولنا چاہیے ۔

ممتاز کشمیری راہنما شمس الرحمٰن کا کہنا کہ فلم کو انگلینڈ، پاکستان اور آزاد جموں کشمیر کے سیاحتی مقامات پر فلمایا گیا اور پردہ سکرین کے پیچھے میوزک تھا جس نے فلم کی خوبصورتی کو چار چاند لگا دیے ۔ شہلا گل کا کہنا تھا کہ فلم میں تین ثقافتوں کو دکھایا گیا کہانی اچھی ہونے کے ساتھ اسے انتہائی خوبصورتی سے فلمبند کیا گیا ۔نمائش میں شریک شمائلہ اور جاوید کا کہنا تھا فلم میں پاکستان اور انگلینڈ کی ثقافت کو دکھایا گیا پاکستان کے سیاحتی مقامات کی قدرتی خوبصورتی قابل دید ہے ۔ ہمیں اپنے بچوں کو چھٹیوں میں پاکستان لے جاکر اپنی ثقافت بارے آگاہی دینی چاہیے ۔ راچڈیل کونسل کے کونسلرز افتخار اور شکیل احمد کا کہنا کہ تھا کہ ثقافت کو سیکھنے کے لیے زبان سے واقفیت ہو فلم کے اندر مادری زبان بھی بولی گئ جو ہماری نوجوان نسل کے لیے اچھی کاوش ہے ۔انگلینڈ پاکستان اور آزاد جموں کشمیر فلم میں بین الثقافتی تشخص کو اجاگر کرنے سے نئی نوجوان نسل کا مادر وطن سے مضبوط ناطے میں پل کا کردار ادا کرے گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes