اوورسیز کشمیری رہنمائوں کی ملاقات، یاسین ملک کی رہائی کیلئے دستخطی مہم تیز کرنے کی ضرورت پر زور – Kashmir Link London

اوورسیز کشمیری رہنمائوں کی ملاقات، یاسین ملک کی رہائی کیلئے دستخطی مہم تیز کرنے کی ضرورت پر زور

مانچسٹر(محمد فیاض بشیر) آزاد کشمیر کے اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین اور جمون کشمیر تحریک حق خودارادیت کے چیئرمین راجہ نجابت حسین کی اہم ملاقات، چوہدری محمد یاسین نے حریت راہنما یاسین ملک کی رہائی کے سلسلہ میں چلائی جانے والی کشمیر پیٹیشن دستخطی مہم پراپنے دیگر ساتھیوں سمیت د ستخط کئے اور راجہ نجابت حسین کو اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا اورمسئلہ کشمیر کے سلسلہ میں متحد ہو کر سرگرمیاں جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔اس موقع پر تحریک کے سرپرست سردار عبدالرحمان خان، سابق مشیر حکومت برائے وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ شوکت خالق ایڈووکیٹ، تحریک کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل،نواز پوٹھی اور چوہدری محمد یاسین کے دست راست چوہدری صغیر پوٹھی و دیگر موجود تھے۔
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے بانی چیئر مین راجہ نجابت حسین نے کہا ہے کہ آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ برائے کشمیر کی چیئرپرسن ڈیبی ابراھم ایم پی اور سابق گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کی جانب سے شروع کی گئی یاسین ملک رہائی دستخطی مہم کو کامیاب بنانے کیلئے ہماری تحریک نے برطانیہ بھر میں سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں اور اسی سلسلہ میں برطانیہ کے شہر ڈربی سے حافظ فضل احمد سے ملاقات کر کے دستخطی مہم کے کاغذات وصول کئے اور برمنگھم سے کُل جماعتی بین الا قوامی کشمیر رابطہ کمیٹی کے صدر چوہدری شاہنواز و سیکرٹری جنرل صاحبزادہ محمد فاروق قادری سے بھی کشمیر دستخطی مہم کے کاغذات موصول کئے۔ تحریک کے تمام عہدیداران خصوصا خواتین اور نوجوان بڑھ چڑھ کر اس دستخطی مہم کو کامیاب بنا رہے ہیں۔ تحریک کے عہدیدار آسیہ حسین و دیگر خواتین اپنا عملی کردار ادا کر رہی ہیں۔

مانچسٹر سے تحریک کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل دستخطی مہم کی کامیابی کے لئے میدان عمل میں اُتر چکے ہیں۔بولٹن، اولڈھم، بری اوربرطانیہ بھر میں کشمیر پیٹیشن دستخطی مہم زور و شور سے کامیابی کے ساتھ چلائی جا رہی ہے۔ راجہ نجابت حسین نے کہا کہ اس دستخطی مہم کے آغاز سے ہی ہم نے برطانیہ بھر میں اپنی تحریک کے تمام عہدیداروں کو متحرک کر دیا تھا جس کے انتہائی حوصلہ افزاء نتائج موصول ہو رہے ہیں۔ راجہ نجابت حسین نے کہا کہ ہماری تحریک کے عہدیداران مقامی کمیونٹی راہنماؤں کے ساتھ مل کر دستخطی مہم چلا رہے ہیں۔راجہ نجابت حسین نے کہا کہ ہم نے برطانیہ میں بسنے والے تمام کشمیریوں سے اپیل ک رکھی ہے کہ ہم سب نے اس دستخطی مہم کو ہر صورت میں کامیاب کرنا ہے اور ہر صورت میں مکمل کر کے جلد از جلد آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ برائے کشمیر کی چیئر پرسن ڈیبی ابراھم ایم پی کے پاس جمع کروانا ہے تا کہ برطانوی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر کے حوالہ سے اور یاسین ملک کی رہائی کے حوالہ سے تفصیلی بحث منعقد کرنے کے لئے تاریخ مقرر کی جا سکے۔

راجہ نجابت حسین نے کہا کہ مشاہدے میں یہ بات آئی ہے کہ تمام کشمیری جماعتیں اور کشمیری راہنما اپنا اپنا متحرک کر دار ادا کر رہے ہیں۔ راجہ نجابت حسین نے ایک مرتبہ پھر تمام کشمیری جماعتوں، کشمیری راہنماؤں، سیاسی و مذہبی جماعتوں اور ممبران برطانوی پارلیمنٹ، لارڈ میئرز، میئرز اور کونسلروں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں مقیم کشمیریوں کی نمائندگی کا حق ادا کرتے ہوئے اس دستخطی کشمیر پیٹیشن مہم کو کامیاب بنانے کیلئے اپنا بھرپور عملی کردار ادا کریں تا کہ برطانوی حکومت کو اس مسئلہ کی سنگینی سے آگاہ کیا جا سکے اور برطانوی حکومت اپنا عالمی اثر و رسوخ استعمال کر کے نہ صر ف یاسین ملک کی رہائی کو ممکن بنا سکے بلکہ دیگر کشمیری راہنماؤں پر بھارت کی جانب سے بنائے جانے والے بے بنیاد اور غیر قانونی کیسوں کا راستہ روکا جا سکے اور یاسین ملک کے ساتھ ساتھ آسیہ اندرابی، شبیر شاہ و دیگر کشمیری راہنماؤں کو بھی بھارتی جیلوں سے رہائی دلوائی جا سکے۔ راجہ نجابت حسین نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ برطانوی پارلیمنٹ میں ہونے والی بحث کے انتہائی موثر اثرات مرتب ہوں گے اور بھارت کشمیریوں کو حق خود ارادیت دینے پر مجبور ہو جائے گا اور کشمیریوں کا ان کا حق خود ارادیت مل کر رہے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes