اے رب عظیم سیلاب زدگان کی اپنے غیب سے مدد فرما – Kashmir Link London

اے رب عظیم سیلاب زدگان کی اپنے غیب سے مدد فرما

القرآن – سورۃ نمبر 49 الحجرات
آیت نمبر 10
ترجمہ:
مومن تو آپس میں بھائی بھائی ہیں۔ تو اپنے دو بھائیوں میں صلح کرادیا کرو۔ اور خدا سے ڈرتے رہو تاکہ تم پر رحمت کی جائے آئیں اب اپنے پیارے آقا کریم علیہ السلام حضرت ابوایوب انصاری روائت کرتے ھیں کہ ایک صاحب نے کہا یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم مجھےکوئی ایسا عمل بتائیں جو مجھے جنت لے جائے اس پر لوگوں نے کہا کہ اسے کیا ھوگیا ھے اسے کیا ھو گیا ھے نبی کریم علیہ السلام نےفرمایا کہ کیوں کیا ھو گیا ھے اجی اس کو کو ضرورت ھے اس لئے پوچھ رھا ھے اس کے بعد آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ اللہ کی عبادت کر اللہ کے ساتھ کسی کو شریک نہ کر نماز قائم کر زکوٰۃ دیتے رھو اور صلہ رحمی کرتے رھو بس یہ اعمال تجھ کو جنت میں لے جائیں گے چل اب نکیل چھوڑ دے راوی نے کہا کہ شاید اس وقت نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنی اونٹنی پر سوار تھے صحیح بخاری حدیث نمبر5983 ۔
فصل ادب یہ تو تھی بشارت صلہ رحمی کرنے والے کیلئے آئیں اب قطع رحمی کرنے کاگناہ صحیح بخاری حدیث نمبر 5984 جبیر بن مطعم رضی اللہ تعالٰی عنہ نے خبر دی انہوں نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے سنا نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا قطع رحمی کرنے والا جنت میں نھی جائے گا حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالٰی عنہ روائت بیان فرماتے ھیں نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ جسے پسند ھے کہ اس کی روزی میں فراخی ھو اور اس کی عمردراز کی جائے تو وہ صلہ رحمیکیا کرے صحیح بخاری رقم الحدیث 5985 صحیح بخاری۔
باب: جو شخص صلہ رحمی کرتا ہے اللہ اسے ملاتا ہے
حدیث نمبر: 5987
ترجمہ:
مجھ سے بشر بن محمد نے بیان کیا، کہا ہم کو عبداللہ نے خبر دی، کہا ہم کو معاویہ بن ابی مزرد نے خبر دی، کہا کہ میں نے اپنے چچا سعید بن یسار سے سنا، وہ ابوہریرہ ؓ سے بیان کرتے تھے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا کہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا اللہ تعالیٰ نے مخلوق پیدا کی اور جب اس سے فراغت ہوئی تو رحم نے عرض کیا کہ یہ اس شخص کی جگہ ہے جو قطع رحمی سے تیری پناہ مانگے۔ اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ ہاں کیا تم اس پر راضی نہیں کہ میں اس سے جوڑوں گا جو تم سے اپنے آپ کو جوڑے اور اس سے توڑ لوں گا جو تم سے اپنے آپ کو توڑ لے؟ رحم نے کہا کیوں نہیں، اے رب! اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ پس یہ تجھ کو دیا۔ رسول اللہ ﷺ نے اس کے بعد فرمایا کہ اگر تمہارا جی چاہے تو یہ آیت پڑھ لو فهل عسيتم إن توليتم أن تفسدوا في الأرض وتقطعوا أرحامکم‏ یعنی کچھ عجیب نہیں کہ اگر تم کو حکومت مل جائے تو تم ملک میں فساد برپا کرو اور رشتے ناطے توڑ ڈالو۔ یہ پیارے بھائیو اور بھنوں ھمارے پیارے آقا علیہ السلام کا فرمان اور آیات قرآن ھمیں بتا رھی ھیں کہ اللہ کریم کی رضا جوڑنے میں اور ایک وہ بھائی یا بھن جو تمھارے والدین سے ھے ایک وہ بھن اور بھائی ھے جسے قرآن نے تیرا بھائی فرمایا جو تیرے ساتھ پیدا ھوا ھے چاھے زمانے کا فراڈیہ لٹیرا ھو بدکار و بد اخلاق ھو تیرا دل چاھتا ھے تیری تمنا ھوتی ھے کہ اسے کوئی دکھ نہ ملے اگر ضمیر زندہ ھو تو جس کے بارے میں قرآن فرما رھا ھے تیرا بھائی ھے تیری بھن ھے پھر کس طرح تو اس کی برائی اور نقصان کرتے وقت سب کچھ بھول جاتا ھے اپنی زبان سے اگر تو کسی کو بھائی یا بہن کہے تو کوشش کرتا ہے کہ اس کو خوش کرنے کیلئے چاھے تجھے گمراہ کن کردار ادا کرنا پڑے تو کرجاتے ھو تو جسے رب نے تیرا بھائی یا بھن بنایا ھے اس سے زیادتی کرتے وقت کیوں تجھے رب یاد نھی رھتا جب تم کسی مومن کے بارے میں برا سوچتے ھو تو اس وقت میرے رب کی محبت اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کیرحمت سے دور ھو جاتے کسی کے نظروں سے اوجھل ھونے پر اس کی برائی کرنے والا مومن نھی منافق ھے چاھے جتنے بھی دین کے ٹھیکیدار بن کر دکھاوا کرکے لوگوں میں جھوٹی شان حاصل کریں ان کا رب سے نھی دولت دنیا کی طلب اور ریاء کاری مکاری پر مشتمل ہیں ایسے لوگ جلد ھی انسانیت کے لئے عبرت کا نشان بن کر رہ جائے ھیں اور وہ کسی کا برا نہیں کر سکتے کیوں کہ عزت رزق میرے رب کے قبضہ قدرت میں ھے اسلئے آو رب کائنات سے مل کر التجاء کریں کہ ھمارے وہ بھائی سیلاب کی وجہ سے بے گھر ھوگئے ھیں اللہ کریم ان پر اپنی رحمت فرماکر ان غیب سے مدد فرمائے وہ ھماری بھنیں اور بیٹیاں جو اس وقت سروں پر چھت جیسی نعمت سے محروم ھیں اللہ کریم ان ھماری ماوں بہنوں بیٹیوں کو ھر وہ نعمت عطا فرمائے جس کی انھیں ضرورت ھے سب مسلمان اس مشکل وقت میں جو آپ کے پاس میسر ھے فوری طور پر لیکر ان امداد کیلئے پہنچیں اللہ کریم اجر عظیم عطا فرمائے آمین ثم آمین۔

50% LikesVS
50% Dislikes