لیڈی ڈیانا کا متنازعہ انٹرویو؛ بی بی سی نے تحقیقات کیلئے اعلیٰ عدلیہ کے سابق جج کی خدمات حاصل کرلیں – Kashmir Link London

لیڈی ڈیانا کا متنازعہ انٹرویو؛ بی بی سی نے تحقیقات کیلئے اعلیٰ عدلیہ کے سابق جج کی خدمات حاصل کرلیں

لندن (اکرم عابد) برطانوی نشریاتی ادارے برٹش براڈکاسٹنگ کارپوریشن (بی بی سی) نے اعلان کیا ہے کہ 1995 میں شہزادی ڈیانا کے ادارے کو دیے گئے انٹرویو پر تحقیقات کا باقاعدہ آغاز کر دیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں سپریم کورٹ کے سابق جج کو تحقیقات کی ذمہ داری سونپ دی گئی ہے۔

اپنی تعیناتی پر جج جان ڈائسن کا کہنا تھا کہ یہ ایک انتہائی اہم ذمہ داری ہے جس میں فوری کام شروع کررہا ہوں اور یقین دلاتا ہوں کہ یہ انکوائری سب فریقین کیلئے شفاف ہوگی۔
دریں اثنا شہزادی ڈیانا کے بڑے بیٹے پرنس ولیم نے بھی اس معاملے پر اپنی خاموشی کو توڑتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں سچ کا انتظار ہے۔


یاد رہے نومبر 1995 میں شہزادی ڈیانا کے انکشافات بھرے انٹرویو نے تہلکہ مچادیا تھا، اس انٹرویو کو 2 کروڑ 28 لاکھ افراد نے دیکھا تھا جس میں ڈیانا نے نہ صرف اپنی شادی کے بارے میں انکشافات تھے بلکہ شاہی خاندان اور تخت کی وراثت پر بھی بات کی تھی۔

بی بی سی کے اس پروگرام پینوراما کے رپورٹر مارٹن بشیر پر آنجہانی شہزادی ڈیانا کے بھائی چارلز سپینسر نے الزام عائد کیا تھا کہ اس نے جعلی دستاویزات دکھا کر شہزادی کو انٹرویو کیلئے آمادہ کیا تھا۔ جسکے نتیجے میں انٹرویو میں لیڈی ڈیانا نے شہزادہ چارلز کے ساتھ اپنی شادی میں پیش آنے والی مشکلات کا ذکر کیا۔
اسی انٹرویو میں ڈیانا نے نہ صرف اپنی شادی کے بارے میں سنسنی خیز انکشافات کیئے بلکہ شاہی خاندان اور تخت کی وراثت پر بھی بات کی تھی۔

انٹرویو میں ڈیانا نے بتایا تھا کہ ان کی شادی میں تین افراد شریک تھے جن ایک خود لیڈی ڈیانا دوسرے پرنس چارلز اور تیسری پرنس چارلز کی دیرینہ محبوبہ کمیلا پارکر شامل ہیں۔
لیڈی ڈیانا اور پرنس چارلز کی طلاق 1996 مین ہوئی تھی جب کہ اگلے ہی سال پیرس میں ان کی گاڑی کو حادثہ پیش آیا تھا جس میں وہ ہلاک ہو گئیں تھیں۔


بڑے عرصے سے اس انٹرویو کے حوالے سے یہ الزام عائد کیا جا رہا تھا کہ بی بی سی کے رپورٹر مارٹن بشیر نے دھوکے سے لیڈی ڈیانا کو انٹرویو کے لیے راضی کیا اور لیڈی ڈیانا کو یہ بھی کہا تھا کہ ان کے اپنے سٹاف کے افراد کو ان پر جاسوسی کرنے کے لیے پیسے دیے جا رہے ہیں۔
انٹرویو سے پہلے مارٹن بشیر کو بہت کم لوگ جانتے تھے تھے مگر انٹرویو کے بعد مارٹن بشیر کا کیریئر بین الاقوامی شہرت حاصل کر گیا تھا۔

لیڈی ڈیانا کے بھائی کی جانب سے لگائے گئے الزامات کا مارٹن بشیر نے فی الحال جواب نہیں دیا۔ بی بی سی کے مطابق مارٹن کی طبیعت کرونا وائرس کے باعث شدید ناساز ہے جبکہ آئی ٹی وی نے اپنی ایک رپورٹ میں دکھایا کہ وہ شام کے وقت کھانے کے لفافے ہاتھ میں پکڑے شاپنگ کے بعد گھر واپس جارہے تھے۔
بی بی سی پر ماضی میں اسی طرز کی تحقیقات کو دبانے کا الزام بھی ہے اور اب بی بی سی کا کہنا ہے کہ تحقیقات مکمل ہونے کے بعد رپورٹ کو منظر عام پر لایا جائے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes