قرضوں کے بوجھ تلے دبی پاکستانی قوم کو ساڑھے چار ارب روپے کا ٹیکہ، ذمہ دار کون ؟ – Kashmir Link London

قرضوں کے بوجھ تلے دبی پاکستانی قوم کو ساڑھے چار ارب روپے کا ٹیکہ، ذمہ دار کون ؟

لندن (اکرم عابد) لندن ہائیکورٹ میں کیس ہارنے کے بعد قومی احتساب بیورو (نیب) نے خاصے عرصے سے براڈ شیٹ فرم کو واجب الادا 4 ارب 58 کروڑ روپے ادا کردیے۔
نیب کے وکیل اور لیگل فرم کو فیس کی ادائیگی کے بعد یہ رقم 7 ارب 18 کروڑ روپے تک پہنچ جائے گی۔
تفصیلات کے مطابق 17سال قبل درجنوں پاکستانیوں کے مبینہ غیر ملکی اثاثوں کی تلاش کیلئے حکومت پاکستان کی طرف سے براڈ شیٹ فرم کی خدمات حاصل کی گئی تھی تاہم ایک روپے کا بھی پتا نہیں لگایا جاسکا تھا۔ جس پر خفگی کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کے فرنٹ ادارے نیب نے ادائیگی سے انکار کردیا تھا جس پر متعلقہ فرم عدالت میں پہنچ گئی تھی۔

ذرائع کے مطابق لندن کی مصالحتی عدالت نے 2018 میں نیب کے خلاف 2 کروڑ ڈالر جرمانہ عائد کیا اور جرمانہ ادا نہ کرنے پر دو سال میں 90 لاکھ ڈالر سود بھی شامل ہوگیا جبکہ مصالحتی عدالت نے 2 کروڑ 90 لاکھ ڈالر 30 دسمبر تک ادا کرنے کا حکم دیا تھا۔

نیب کی جانب سے رقم کی عدم ادائیگی پر گزشتہ روز پاکستان ہائی کمیشن کے اکائونٹس بھی مجنمد ہونے کی اطلاعات تھیں جنکی ہائی کمیشن کے ترجمان نے اسکی تردید کردی تھی۔
برطانوی فرم براڈشیٹ نے حکومت پاکستان سے 29 ملین ڈالر ملنے کی تصدیق تو کی ہے تاہم ساتھ ہی بقیہ رقم کا بھی مطالبہ کر دیا ہے۔ فرم کا مؤقف ہے کہ 3 ملین ڈالر مزید اور اُس پر 5 ہزار ڈالر روزانہ سود کی مد میں ادائیگی باقی ہے۔

برطانوی فرم کا کہنا ہےکہ بقیہ رقم کی ادائیگی تک یہ رقم 5 ہزار ڈالر روزانہ کی بنیاد پر سود بڑھتا رہے گا۔
یہاں سوال یہ پیدا ہوتا ہے غربت، افلاس اور قرضوں کے بوجھ تلے دبی قوم پر اس اضافی بوجھ کا ذمہ دار کون ہے؟ کیا اسکا تعین کیا جائے گا؟

50% LikesVS
50% Dislikes