اوسلو میں ای کچہری کا انعقاد، سفیر پاکستان نے عوامی مسائل سنے اور حل کی یقین دہانی کرائی – Kashmir Link London

اوسلو میں ای کچہری کا انعقاد، سفیر پاکستان نے عوامی مسائل سنے اور حل کی یقین دہانی کرائی

اوسلو (کشمیر لنک نیوز) حکومت پاکستان کی ہدایات کی روشنی میں اوورسیز سفارتخانوں نے عوامی مسائل سے آگاہی اور انکے حل کیلئے کھلی کچہریوں کا آغاز کردیا ہے، ناروے اور آئس لینڈ میں پاکستان کے سفیر ظہیر پرویزخان نے بھی ایسی ہی ایک کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ناروے اور آئس لینڈ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کی خدمت اور ان کے مسائل کا فوری تدارک ہماری اولین ترجیح ہے اورسفارتخانہ پاکستان کے دروازے اپنی کمیونٹی کی خدمت کے لیے 24 گھنٹے کھلے ہیں۔

سفیر پاکستان نے کہا کہ کھلی کچہری پاکستانی برادری کے مسائل کے موثرحل کے لئے وزیر اعظم عمران خان کا اقدام تھا۔انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی وطن عزیز کا ایک انمول اثاثہ ہیں اور ان کے مسائل خدمت اور سہولت سفارتخانہ کی بنیادی ذمہ داری اور حکومت کی کلیدی ترجیح ہے۔
پاکستانی کمیونٹی کے طاہر محمود، عرفان احمد، طارق شہباز،مس مریم، شہزاد خالد اور دیگر نے کھلی کچہری میں اپنی گذارشات پیش کیں۔

طارق شہبازنے کھلی کچہری کا اہتمام کرنے پر سفیر پاکستان کو مبارکباد دی اور کہا کہ میرا ذاتی معاملہ نہیں ہے لیکن اپنی پاکستانی کمیونٹی کی مدد کےلئے میں ضرور آوازاٹھاؤ گا، انہوں نے کہا کہ پی آئی اے کیخلاف ہماری شکایات کا ازالہ کیاجائے، طارق شہباز نےکہا کہ جب سے کویڈ19شروع ہوا ہے اور جو لوگ پاکستان گئے ہوئے تھے وہ واپسی پر پی آئی اے کی نئی مہنگی ٹکٹیں خرید کر چارٹرڈ فلائٹ سےواپس ناروے آئے، ان لوگوں کو ان کی پہلی ٹکٹ کےپیسےواپس نہیں دیئے جارہے اور اگر کچھ لوگوں کو پیسے دیئے بھی جا رہے ہیں تو اس میں سے تیس پرسنٹ کی کٹوتی کی جارہی ہے ،پی آئی اے کے ایجنٹ اوورسیزپاکستانیوں سے اچھاسلوک نہیں کررہے ہیں۔

جواب میں سفیرپاکستان ظہیرپرویز خان نے کہا کہ مجھے پہلے بھی کچھ کمپلین آئی ہوئی ہیں لیکن مجھے اطلاع یہ بھی ہے کہ پی آئی اے نے کافی لوگوں کو ٹکٹ کے پیسے ریفنڈ بھی کیے ہیں میں پی ٹی آئی کے چیئرمین ارشد ملک سے رابطہ کرنے کے بعد اپنی معزز پاکستانی کمیونٹی ممبران کے ٹکٹوں کے پیسے واپس دلواؤں گا۔

کچھ افراد کیطرف سے سوال آیا کہ کہ جنوری 2020سے ناروے نےڈیو نیشنل سٹیزن کا قانون پاس کیا ہوا ہےاور اس قانون پر پاکستان کی طرف سے ابھی تک کوئی عمل درآمد نہیں ہوا جس پر سفیرپاکستان نے کہا کہ پاکستانیوں کی بہت بڑی تعداد ناروے میں موجود ہے اور ان کے پاس نارویجن پاسپورٹ ہیں اور وہ ڈیونیشنلٹی لینا چاہتے ہیں، دو مہینے پہلے پاکستان حکومت کی طرف سے فیصلہ ہوا تھا کہ ہمیں دوہری شہریت پر کوئی اعتراض نہیں ہے ہم متعلقہ اداروں سے رابطے میں ہیں اور یہ ایجنڈاپاس ہونے کے لیےکیبنٹ میں جائے گا اور وہاں سے قانون پاس ہونے کے بعد وزارت داخلہ اعلان کرے گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes