بطل حریت، فرزند پاکستان اور معروف کشمیری رہنما سید علی گیلانی دنیائے فانی سے رخصت ہوگئے – Kashmir Link London

بطل حریت، فرزند پاکستان اور معروف کشمیری رہنما سید علی گیلانی دنیائے فانی سے رخصت ہوگئے

لندن (کشمیر لنک نیوز) مقبوضہ کشمیر کی سیاست پر پانچ دہائیوں تک چھائے رہنے والے بزرگ مزاحمتی رہنما سید علی گیلانی سرینگر میں وفات پا گئے، انا للہ و انا الیہ راجعون۔ وفات کی خبر سنتے ہی دور دراز سے ان کے دیوانے انکے گھر آنے کو بے تاب ہوئے لیکن بھارتی ظالم افواج نے ایک بار پھر ہٹ دھرمی اور بے شرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے انہیں وہاں آنے سے روک دیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ایک ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ مرحوم کے گھر کے باہر بھارتی فوجیوں کی کثیر تعداد موجود ہے اور جب ایک صحافی ان سے سوال کرتا ہے کہ وہ یہاں کیوں ہیں اور کیا پیغام دینا چاہتے ہیں تو انکا جواب تھا کہ میت کو گھر والے دفنادیں باہر سے کسی کو آنے کی اجازت نہ ہوگی۔

کشمیری رہنما نے بہت عرصہ پہلے سرینگر میں واقع ’شہیدوں کے قبرستان‘ میں دفن کیے جانے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔ تاہم فوری طور پر یہ واضح نہیں کہ حکام اس کی اجازت دیں گے یا نھیں کیونکہ آمدہ اطلاعات کے مطابق حکام کی جانب سے علی گیلانی کے اہلخانہ پر ان کی تدفین جلد از جلد کرنے پر زور دیا جا رہا ہے۔ خبررساں ادارے اے این آئی کے مطابق کشمیر زون کے آئی جی نے بتایا ہے کہ ’وادی میں مختلف پابندیوں کے اطلاق کے علاوہ انٹرنیٹ سروسز کی معطلی کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

علی گیلانی اپنے سیاسی سفر میں اکثر جیل جاتے رہے اور عمر کی تقریباً ایک دہائی انھوں نے قیدخانوں میں گزاری۔ اُن کی تین بیٹیاں اور دو بیٹے ہیں۔ انکی وفات پر مختلف حلقوں کی جانب سے گہرے غم کا اظہار کیا جا رہا ہے اور سیاستدانوں اور عوام کی جانب سے انھیں خراج عقیدت پیش کیا جا رہا ہے۔ مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے اپنی ٹویٹ میں سید علی گیلانی کی مستقل مزاجی کی تعریف کی اور کہا کہ وہ ہمیشہ اپنے اصولوں پر قائم رہے۔

برطانوی دارالعوام کے پہلے کشمیری نژاد رکن لارڈ نذیر احمد نے سید علی گیلانی کی وفات کو کشمیریوں کیلئے عظیم سانحہ قرار دیا ہے۔ پاکستان ہائی کمیشن لندن نے اپنی ایک ٹویٹ میں اظہار افسوس کرتے ہوئے سید علی گیلانی کی وفات کو کشمیر کاز کیلئے ایک بڑا دھچکہ قرار دیا ہے۔

تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر فہیم کیانی نے مرحوم کے گھر کے باہر بھارتی افواج کی موجودگی کو ظلم سے تعبیر کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت مظلوم کشمریوں کو اپنے محبوب رہنما کی نماز جنازہ پڑھنے سے روکنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ جمعہ تین سمتبر کو مرحوم سید علی گیلانی کی نماز جنازہ برطانیہ بھر کی مساجد میں ادا کی جائے گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes